News4

آٹو ڈرائیورس کے مسائل پر اسمبلی میں حکومت اور اپوزیشن میں تلخ مباحث

راجیشور ریڈی پر وزراء کی برہمی ، سالانہ 12000 روپئے امداد پر جلدعمل ، بی آر ایس کو خواتین کا مفت سفر برداشت نہیں، خاتون وزراء کا الزام
حیدرآباد ۔ 9 ۔ فروری (سیاست نیوز) تلنگانہ قانون ساز اسمبلی میں آج ریاستی وزراء اور بی آر ایس ارکان کے درمیان تلخ نوک جھونک ہوئی اور آر ٹی سی میں خواتین کو مفت سفر کی اسکیم سے آٹو ڈرائیورس کے متاثر ہونے کے مسئلہ پر گرما گرم مباحث ہوئے۔ گورنر کے خطبہ پر تحریک تشکر مباحث میں حصہ لیتے ہوئے بی آر ایس کے رکن پی راجیشور ریڈی نے خواتین کو مفت سفر کی سہولت سے آٹو ڈرائیورس کی مالی مشکلات کا حوالہ دیا اور دعویٰ کیا کہ تلنگانہ میں تقریباً 21 آٹو ڈرائیورس نے خودکشی کرلی ہے۔ وزیر ٹرانسپورٹ پونم پربھاکر ، وزیر امور مقننہ ڈی سریدھر بابو اور وزیر جنگلات کونڈہ سریکھا نے بی آر ایس رکن کے الزامات کی سختی سے تردید کی اور کہا کہ آٹو ڈرائیورس سے ہمدردی کے نام پر بی آر ایس خواتین کو مفت سفر اسکیم کی مخالفت کر رہی ہے۔ سریدھر بابو نے کہا کہ حکومت آٹو ڈرائیورس کی بھلائی کی پابند عہد ہے اور حکومت نے سالانہ 12000 روپئے امداد کا فیصلہ کرتے ہوئے انتخابی منشور میں شامل کیا ہے ۔ راجیشور ریڈی کی جانب سے ڈرائیورس کو ماہانہ 10,000 روپئے امداد اور آٹو ڈرائیورس کے قرض کی معافی کے مطالبہ پر سریدھر بابو نے سوال کیا کہ بی آر ایس حکومت نے 10 برسوں میں آٹو ڈرائیورس کی مدد کیوں نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ ماہانہ 10 ہزار روپئے کی امداد کا مطالبہ کرنے والی بی آر ایس پارٹی نے اپنی حکومت کے دوران آٹو ڈرائیورس کی مدد کیوں نہیں کی۔ انہوں نے کہا کہ سالانہ 12 ہزار روپئے کی امدادی اسکیم کو بجٹ میں شامل کیا جائے گا۔ انہوں نے بی آر ایس ارکان کو مشورہ دیا کہ وہ ریاست کی ترقی کے بارے میں حکومت کو تجاویز پیش کریں۔ وزیر قبائلی بہبود سیتکا نے الزام عائد کیا کہ خواتین کو مفت سفر کی سہولت بی آر ایس کو برداشت نہیں ہے۔ حکومت نے مفت سفرکی اسکیم کیلئے معاوضہ کے طور پر آر ٹی سی کو 530 کروڑ روپئے ادا کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہریش راؤ اور دیگر ارکان آٹو ڈرائیورس کے بارے میں گمراہ کن بیانات دے رہے ہیں۔ ریاستی وزراء سیتکا اور کونڈہ سریکھا نے خواتین کو مفت سفر کی اسکیم پر بی آر ایس کے موقف پر وضاحت طلب کی۔ ایک مرحلہ پر ایوان میں نظم بحال کرنے کیلئے اسپیکر پرساد کمار کو مداخلت کرنی پڑی۔ وزیر ٹرانسپورٹ پونم پربھاکر نے الزام عائد کیا کہ بی آر ایس آٹو ڈرائیورس کو مشتعل کرنے کی کوشش کر رہی ہے جبکہ کانگریس حکومت نے پہلے ہی سالانہ 12000 روپئے امداد کا وعدہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر کے ایک رشتہ دار کو ریٹائرمنٹ کے باوجود آر ٹی سی میں اگزیکیٹیو ڈائرکٹر کے عہدہ پر چار سال برقرار رکھ کر آر ٹی سی کو تباہ کیا گیا ۔ وزیر سیتکا نے کہا کہ بی آر ایس حکومت نے دولتمند کسانوں کو رعیتو بندھو کی رقم جاری کی تھی لیکن آج غریب خواتین کو مفت سفر برداشت نہیں ہے۔ گورنمنٹ وہپ ایلیا نے جب کویتا اور ہریش راؤ کا نام لیکر تنقید کی تو بی آر ایس ارکان ایوان کے وسط تک پہنچ گئے ۔ تاہم اسپیکر نے ایوان میں غیر موجود افراد کا نام ریکارڈ سے حذف کرنے کا تیقن دیا ۔ 1

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *