News4

اسمبلی میں گرما گرم مباحث کے بعد آبپاشی پراجکٹس پر قرارداد منظور

بی آر ایس نے غلطی کی جس کو ہم درست کررہے ہیں، یہ بی آر ایس و عوام کی کامیابی ہے ، ہریش راؤ کا دعویٰ
اتم کمار ریڈی ، کومٹ ریڈی اور ہریش راؤ کے درمیان تلخ مباحث، تمام جماعتوں کی قرارداد کو تائید

حیدرآباد : 12فبروری ( سیاست نیوز) وزیر آبپاشی اُتم کمار ریڈی کی جانب سے اسمبلی میں آبپاشی پراجکٹس پر پیش کردہ قرارداد کو گرما گرم بحث کے بعد اتفاق رائے سے منظور کرنے کا اسپیکر اسمبلی جی پرساد کمار نے اعلان کیا ۔ ان مباحث میں کانگریس ، بی آر ایس ، بی جے پی ، مجلس اور سی پی آئی کے ارکان نے حصہ لیتے ہوئے حکومت کو مشورے دیئے ۔ وزیر آبپاشی اتم کمار ریڈی اور بی آر ایس رکن اسمبلی ہریش راؤ کے درمیان اور ریاستی وزیر کومٹ ریڈی اور ہریش راؤ کے درمیان تلخ مباحث ہوئے ۔ کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی نے چپل سے مارنے کا ریمارکس کیا جس پر بی آر ایس ارکان نے اعتراض کرکے احتجاج کیا ۔ کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی سے معذورت خواہی کا مطالبہ کیا یا اسپیکر کو اسمبلی ریکارڈ سے غیر پارلیمانی الفاظ کو حذف کرنے کا مطالبہ کیا تب تک ایوان کی کارروائی میں خلل کا اعلان کیا ۔ اسپیکر نے مداخلت کرکے غیر پارلیمانی الفاظ کو ریکارڈ سے حذف کردینے کا اعلان کیا جس کے بعد بی آر ایس کے ارکان اسمبلی احتجاج سے دستبردار ہوئے ۔ اسمبلی کے اجلاس میں دریائے کرشنا پراجکٹس کے آر ایم بی اور مرکز کے حوالے نہ کرنے کی قرارداد منظور ہوئی ۔وزیر آبپاشی این اُتم کمار ریڈی نے بی آر ایس حکومت کے غلط فیصلوں اور بے قاعدگیوں کو ایوان میں پاؤر پوائنٹ پریزنٹیشن کو کے آر ایم بی کے حوالے کرنے کا فیصلہ کرنے سے واقف کرایا اور کہا کہ سابق بی آر ایس حکومت نے جو غلطیاں کی ہیں کانگریس حکومت اس کو درست کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ بی آر ایس پارٹی اپنی غلطیوں کا اعتراف کریں اور معذورت خواہی کرتے ہوئے قرارداد کی تائید کریں ۔ وزیر آبپاشی اُتم کمار ریڈی اور ہریش راؤ کے درمیان تلخ مباحث ہوگئی ۔ اُتم کمار ریڈی نے ہریش راؤ پر چلر سیاست کرتے ہوئے اسمبلی کا وقار ، گرام پنچایت تک گھٹا دینے کا الزام عائد کیا اور غلط اعداد و شمار اور حوالے دیتے ہوئے ایوان کو گمراہ کرنے کا الزام عائد کیا جس پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہا کہ وہ اُتم کمار ریڈی کے غم و غصہ کو سمجھ سکتے ہیں کیونکہ انہوں نے طویل عرصہ تک کانگریس کی خدمت انجام دی ہے ۔ انہیں چیف منسٹر یا کم از کم ڈپٹی چیف منسٹر بھی نہیں بنایا گیا ۔ ہریش راؤ نے کہا کہ وہ کوئی جھوٹ نہیں بول رہے ہیں اور نہ ہی ایوان کو گمراہ کررہے ہیں بلکہ حکومت کے جی اوز اور کے آر بی ایم اجلاس کا حوالہ دے رہے ہیں ۔ کانگریس حکومت اپنی غلطیوں کی سزا ایک عہدیدار کو دمہ دارا بناتے ہوئے مسئلہ سے راہ فرار اختیار کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ کانگریس حکومت نے ہی ان پراجکٹس کو مرکز کے حوالے کرنے کا فیصلہ کیا جس پر پہلے حکومت معذورت حواہی کریں ۔ اس کے بعد بی آر ایس قرارداد کی مکمل تائید و حمایت کرے گی ۔ ہریش راؤ نے کہا کہ دریائے کرشنا کے پراجکٹس مرکز کے حوالے کرنے کا کانگریس نے فیصلہ کیا ہے جس کے خلاف بی آر ایس نے منگل 13فبروری کو نلگنڈہ میں ایک بہت بڑا جلسہ منعقد کیا ۔ اس سے ایک دن قبل کانگریس حکومت نے اسمبلی میں ایک قرارداد پیش کرتے ہوئے پراجکٹس کو مرکز کے حوالے نہ کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ یہ بی آر ایس کی اور تلنگانہ عوام کی کامیابی ہے ۔ ریاستی وزیر کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی نے درمیان میں مداخلت کرتے ہوئے ہا کہ غلطی کرنے والے بی آر ایس کے سربراہ کے سی آر کو نلگنڈہ کی سرزمین پر قدم رکھنے کا اخلاقی حق نہیں ہے ۔ آج اس مباحث میں حصہ لینے کے بجائے کے سی آر فارم ہاؤز میں آرام کررہے ہیں ۔ اس مسئلہ سے سیاسی فائدہ اٹھانے کیلئے کل نلگنڈہ کو پہنچ رہے ہیں ۔ پہلے وہ اپنی غلطی کا اعتراف کریں ، زمین پر ناک رگڑھ کر نلگنڈہ کو آئے ۔ چیف منسٹر آندھراپردیش جگن موہن ریڈی نے کہا ہیکہ کی سی آر اپنے حدود سے آندھرا کو پانی جاری کیا ہے ۔ بی جے پی کے رکن اسمبلی مہیشور ریڈی نے کالیشورم پراجکٹ کی سی بی آئی تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا ۔ پراجکٹس کو کے آر ایم بی کے حوالے کرنے پر بی جے پی کی جانب سے خیرمقدم کرنے کا اعلان کیا ۔ کُل جماعتی وفد کو دہلی لیجاکر وزیراعظم سے ملاقات کرانے کا چیف منسٹر سے مطالبہ 50 فیصد پانی تلنگانہ کو حاصل کرنے پر زور دیا ۔ مجلس کے قائدم قننہ اکبر الدین اویسی نے مختلف مسائل پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیر آبپاشی اُتم کمار ریڈی کی جانب سے پیش کردہ قرارداد کی مکمل تائید کرنے کا اعلان کیا ۔ سی پی آئی رکن اسمبلی سامبا شیوا راؤ نے بھی قرارداد کی تائید کی ۔ ریاستی وزیر جوپلی کرشنا راؤ نے ہریش راؤ کی تقریر کو آپریشن کامیاب اور مریض فوت ہوجانے کے مترادف قرار دیا ۔ 2

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *