News4

تلنگانہ میں بی آر ایس کا کھیل ختم : کشن ریڈی

بی آر ایس قائدین کو اپنے روشن مستقبل کے لیے بی جے پی میں شامل ہونے کا مشورہ
حیدرآباد ۔ 8 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : مرکزی وزیر و تلنگانہ بی جے پی کے صدر جی کشن ریڈی نے کہا کہ تلنگانہ میں بی آر ایس کا مستقبل ختم ہوگیا ہے ۔ اصل مقابلہ کانگریس اور بی جے پی کے درمیان ہے ۔ انہوں نے بی آر ایس قائدین کو اپنے روشن مستقبل کے لیے بی جے پی میں شامل ہوجانے کا مشورہ دیا ہے ۔ دہلی میں میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے کشن ریڈی نے کہا کہ ملک میں کانگریس کی غیر یقینی صورتحال ہوگئی ہے ۔ گذشتہ لوک سبھا انتخابات میں کانگریس نے جو کامیابی حاصل کی تھی اتنی ہی نشستوں پر دوبارہ کامیابی حاصل کرنے کے آثار نہیں ہے ۔ بی جے پی تلنگانہ کے تمام 17 لوک سبھا حلقوں پر مقابلہ کرے گی اور زیادہ سے زیادہ حلقوں پر کامیابی حاصل کرے گی ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی میں کوئی بھی شامل ہونا چاہے انہیں شامل کرلیا جائے گا جمعہ کو بی جے پی پارلیمنٹری بورڈ کا اجلاس منعقد ہورہا ہے ۔ تلنگانہ کے ہر ایک لوک سبھا حلقہ سے چار دعویداروں کے ناموں پر غور کیا جارہا ہے ۔ مرکزی وزیر نے کہا کہ کانگریس اور بی آر ایس کے درمیان خفیہ اتحاد ہے ۔ بی جے پی کی طرف سے عوام کی توجہ ہٹانے کے لیے دونوں جماعتیں ایک دوسرے پر الزامات جوابی الزامات عائد کررہے ہیں ۔ تلنگانہ میں عوام نے بی آر ایس کو مسترد کردیا ہے ۔ وزیراعظم نریندر مودی کی کارکردگی سے عوام پوری طرح مطمئن ہے اور تیسری مرتبہ بی جے پی کو بھاری اکثریت سے کامیاب بناتے ہوئے مودی کو ہیٹ ٹرک وزیراعظم بنانے کا فیصلہ کرچکے ہیں ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ بی جے پی اس مرتبہ سب سے پہلے 16 فروری تک اپنے امیدواروں کا اعلان کردینے پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے ۔ سکندرآباد سے جی کشن ریڈی کریم نگر سے بنڈی سنجے نظام آباد سے ڈی اروند چیوڑلہ سے کونڈا ویشویشور ریڈی ، بھونگیر سے بی نرسیا گوڑ ، محبوب نگر سے ڈی کے ارونا ، ملکاجگری سے مرلیدھر راؤ ، ایٹالہ راجندر کے ناموں پر سنجیدگی سے غور کیا جارہا ہے ۔ اس کے علاوہ پداپلی ، محبوب آباد ، ناگر کرنول ، ورنگل ، ظہیر آباد ، عادل آباد ، کھمم ، نلگنڈہ لوک سبھا حلقوں کے لیے دوسری جماعتوں سے بی جے پی میں شامل ہونے والے قائدین کو ٹکٹ دینے پر غور کیا جارہا ہے ۔۔ 2

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *