News4

جاریہ سال موسم گرما گذشتہ سے سخت ہونے کے اندیشے

ال نینو کے اثرات اب بھی برقرار ۔ شہریوں کو مکمل احتیاط برتنے کا مشورہ
حیدرآباد۔8۔فروری(سیاست نیوز) موسم گرما کی شدت میں ابتدائی دنوں میں اضافہ و شدید گرمی کو دیکھتے ہوئے ماہرین موسمیات کا کہناہے کہ تلنگانہ میں جاریہ موسم گرما سال گذشتہ سے زیادہ سخت ہوگا اور درجہ حرارت میں اضافہ ہوگا۔ماہرین کا کہناہے کہ ایل نینو کے اثرات جاریہ موسم گرما تک برقرار رہنے کے نتیجہ میں گرمی کی شدت میں کوئی کمی آنے کے امکانات کم ہیں ۔موسم گرما کے آغاز سے ہی دونوں شہروں میں گرمی کی شدت میں اضافہ ہونے لگا ہے اور کہا جا رہاہے کہ آئندہ چند یوم میںدرجہ حرارت میں مزید 2تا3 ڈگری کا اضافہ ہوسکتا ہے ۔ موسم گرما کے آغاز کے ساتھ ہی ریاست میں درجہ حرارت میں 3ڈگری تک کا اضافہ ہونے لگا ہے اور دن کے علاوہ رات میں بھی گرمی میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ ماہرین موسمیات کا کہناہے کہ تلنگانہ میں گذشتہ دو برسوں میںجو گرمی کی شدت ریکارڈ کی گئی تھی اس سے زیادہ گرمی ریکارڈ ہوسکتی ہے ۔ ماہرین کی پیش قیاسی میں کہا گیا کہ حیدرآباد و سکندرآباد کے علاوہ تلنگانہ کے بیشتر اضلاع میں مارچ میں شدید گرمی کا خدشہ ہے اور مارچ کے پہلی ہفتہ میں ہی موسم گرما عروج پر پہنچ جائے گا۔ موسم پر ال نینو کے منفی اثرات کے سبب گرمی کی شدت سے اضافہ پر قابو پانے شہریوں کو محض گرمی سے احتیاط کا ہی مشورہ دیا جاسکتا ہے ۔ موسم کی شدت میں اضافہ سے محفوظ رہنے شہریوں کو راست دھوپ سے محفوظ رہنے کے علاوہ زیادہ سے زیادہ پانی پیتے رہنا چاہئے اور ممکنہ حد تک سر کو ڈھانکے رکھنا چاہئے ۔ گرما کی شدت اور دھوپ میں اضافہ سے لو لگنے کے واقعات میں اضافہ ہونے لگتا ہے اسی لئے شہریوں کو احتیاطی تدابیر میں کوتاہی کرنے سے گریز کرنا چاہئے ۔ ماہرین موسمیات کے مطابق جاریہ موسم گرما کے آغاز کے ساتھ ہی دونوں شہروں میں گرمی کی شدت میں اضافہ ریکارڈ کیا جا رہاہے اور تلنگانہ کے شہری اضلاع میں بھی گرمی کی شدت میں اچانک اضافہ ریکارڈ کیا جانے لگا ہے جسے دیکھتے ہوئے ماہرین موسمیات کا کہنا ہے کہ آئندہ دنوں میں موسم خشک رہے گا ۔3

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *