News4

رائے دہندوں کی تعداد میں ہندوستان دنیا کا نمبر ون ملک

96.88 کروڑ رائے دہندے، گذشتہ 6 برسوں میں ہر سال ایک کروڑ سے زائد ناموں کا اضافہ

حیدرآباد۔/11فروری، ( سیاست نیوز) ہندوستان کا شمار دنیا کی عظیم جمہوریتوں میں ہوتا ہے جہاں عوامی رائے کی بنیاد پر حکومتوں کو منتخب کیا جاتا ہے۔ رائے دہی کے بارے میں عوام کی دلچسپی میں اضافہ کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ فہرست رائے دہندگان پر نظر ثانی میں ہر سال نئے ووٹرس کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ ہندوستان میں رائے دہندوں کی مجموعی تعداد کے بارے میں الیکشن کمیشن کے اعداد و شمار کے مطابق جملہ رائے دہندے 96.88 کروڑ ہیں اور یہ تعداد دنیا میں کسی بھی ملک کے رائے دہندوں میں سب سے زیادہ ہے۔ الیکشن کمیشن کی فہرست رائے دہندگان جو لوک سبھا چناؤ کیلئے جاری کی گئی اس کے مطابق رائے دہندگان کی تعداد میں ہندوستان دنیا میں نمبر ون ہے۔ ملک میں مرد رائے دہندوں کی تعداد 49.72 کروڑ درج کی گئی جبکہ خاتون رائے دہندوں کی تعداد 47.15 کروڑ ہے۔ تھرڈ جینڈر رائے دہندے 48044 ہیں، معذور رائے دہندوں کی تعداد 88.35 لاکھ درج کی گئی ہے۔ فہرست رائے دہندگان میں 2019 سے 2024 تک ہر سال نئے رائے دہندوں کا اضافہ ہوا ہے۔ 18 سے 20 سال عمر کے رائے دہندوں کے ہر سال ایک کروڑ سے زائد نام شامل کئے گئے۔ نوجوان رائے دہندوں میں ووٹنگ سے متعلق دلچسپی کا اظہار ہوتا ہے۔ 2019 میں 1.5 کروڑ نئے رائے دہندوں کے نام شامل کئے گئے۔ 2020 میں یہ تعداد بڑھ کر 1.56 کروڑ ہوگئی۔ 2021 میں 1.24 کروڑ جبکہ 2022 میں 1.34 کروڑ نئے نام فہرست رائے دہندگان میں شامل کئے گئے۔ 2023 میں 1.32 کروڑ ناموں کا اضافہ ہوا جبکہ 2024 میں 1.85 کروڑ 18 تا 19 سال کے رائے دہندوں نے اپنے نام ووٹر کے طور پر شامل کرائے ہیں۔1

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *