News4

رام مندرتقریب کی مخالفت پر منی شنکر اور ان کی بیٹی کو تنقیدوں کا سامنا

نئی دہلی: ریذیڈنٹ ویلفیئر ایسوسی ایشن (آر ڈبلیو اے) نے کانگریس لیڈر منی شنکر ایر اور ان کی بیٹی سورنیا ایر کو جنگ پورہ، دہلی میں اپنا مکان خالی کرنے کا نوٹس بھیجا ہے۔ انہیں یہ نوٹس 22 جنوری کو ایودھیا میں ہونے والی رام مندر کے پران پرتشٹھا کی تقریب کی مذمت کرنے والی ایک سوشل میڈیا پوسٹ کے حوالے سے دیا گیا ہے۔آر ڈبلیو اے کی جانب سے بھیجے گئے نوٹس میں استدعا کی گئی ہے کہ وہ ایسے نازیبا الفاظ استعمال نہ کریں، جس سے امن خراب ہو یا کسی کے مذہبی جذبات مجروح ہوں۔ نوٹس میں کہا گیا ہے کہ ہم ایسے عمل کو فروغ نہیں دے سکتے جس سے کالونی میں امن خراب ہو یا جس سے یہاں رہنے والے لوگوں کے مذہبی جذبات مجروح ہوں۔رپورٹ کے مطابق اس میں کہا گیا ہے کہ اگر آپ کو احساس نہیں ہے کہ آپ نے پران پرتشٹھا کے خلاف کیا کہا ہے، تو ہم آپ کو مشورہ دیں گے کہ براہ کرم کسی ایسی کالونی میں چلے جائیں جہاں لوگ اس قسم کی نفرت سے آنکھیں بند کر لیں۔سورنیا ایر نے 20 جنوری کو ایک فیس بک پوسٹ میں دعویٰ کیا تھا کہ وہ رام مندر کی تقریب کیخلاف احتجاج میں اپواس رکھ رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ اپواس ملک کے مسلم شہریوں کے تئیں محبت اور غم کو ظاہر کرتا ہے۔ آر ڈبلیو اے نے مزید کہا کہ سورنیا ایر نے سوشل میڈیا پر جو کچھ بھی کہا وہ ایک پڑھے لکھے شخص کے لیے شرمناک تھی۔ انہیں سمجھنا چاہیے تھا کہ رام مندر 500 سال بعد بن رہا ہے اور وہ بھی سپریم کورٹ کے 5-0 کے فیصلے کے مطابق۔آر ڈبلیو اے نے اپنے نوٹس میں کہا کہ آپ آزادی اظہار کی آڑ لے سکتی ہیں، لیکن براہ کرم یاد رکھیں کہ سپریم کورٹ کے مطابق، آزادی اظہاررائے مطلق نہیں ہو سکتی۔ نوٹس میں منی شنکر ایر سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ یا تو اپنی بیٹی کی پوسٹ کی مذمت کریں یا گھر چھوڑ دیں۔ ایسوسی ایشن نے اس پر زور دیا ہے کہ وہ لوگوں کو مشتعل نہ کریں اور ان میں نفرت اور عدم اعتماد پیدا نہ کریں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *