ملک میں ادارے کمزور اور خلاف ورزی والے طاقتور ہیں، فضل الرحمان

جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ہمارے ملک میں ادارے کمزور جب کہ خلاف ورزی والے طاقتور ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے انتخابات کے سلسلے میں لاڑکانہ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان تنزلی کی اتنہا پر ہے، کہیں نہ کہیں تو کوئی خرابی موجود ہے۔

فضل الرحمان نے کہا کہ ہمارے ملک میں ادارے کمزور جب کہ خلاف ورزی والے طاقتور ہیں۔ ڈاکو طاقتور اور پولیس کمزور ہے، کہیں عسکریت پسندی تو کہیں ڈاکے اور کہیں چور بازاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئین کہتا ہے کہ قرآن وسنت کے منافی کوئی قانون نہیں بنے گا لیکن اس حوالے سے 1973 سے اب تک کوئی قانون سازی کیوں نہیں ہوئی۔ آج ہمارے پاس بھوک اور خوف کا عذاب ہے، بد امنی ہے۔

فضل الرحمان نے مزید کہا کہ بلوچستان اور کے پی میں لوگ خوف میں الیکشن لڑ رہے ہیں۔ پاکستان اور افغانستان میں تلخی اسی بد امنی کی وجہ سے آئی، ہم امن کے لیے در در کی بھیک مانگتے پھر رہے ہیں۔

جے یو آئی سربراہ کا کہنا تھا کہ جمہوری سیاست میں تمام تر ذمے داری حکمرانوں پر ہوتی ہے۔ منصب اور حلف کے اعتبار سے حکمرانوں کا فرض بنتا ہے کہ ملک کی خدمت کریں۔ الیکشن ایسا ماحول ہوتا ہے جہاں ذمے داری عوام کی طرف آ جاتی ہے۔ عوام اپنی ذمے داری سیاستدانوں کو منتقل کرتے ہیں۔ 8 فروری تک آنے والے دن عوام کی ذمے داریوں کے دن ہیں۔ اللہ لوگوں کے دلوں میں حق بات خود ڈالے گا اللہ جسے چاہے ہدایت دے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *