پاکستان میں الیکشن پر برطانیہ کا ردعمل آگیا

برطانوی وزیر خارجہ ڈیوڈ کیمرون نے کہا ہے کہ برطانیہ اور پاکستان کے درمیان ہمارے لوگوں کے مضبوط باہمی روابط کی بنیاد پر قریبی اور دیرینہ تعلقات ہیں  ہم کل کے انتخابات میں ووٹ کے ذریعے حق رائے دہی استعمال کرنے والے تمام لوگوں کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ ہم انتخابات کی شفافیت میں کمی سے متعلق پیدا ہونے والے سنگین خدشات کو تسلیم کرتے ہیں ہمیں افسوس ہے کہ تمام جماعتوں کو باضابطہ طور پر انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دی گئی تھی اور یہ کہ کچھ سیاسی رہنماؤں کو شرکت سے روکنے اور ان سے منسوب انتخابی نشانات کے استعمال کو روکنے کے لیے قانونی طریقہ کار کا غلط استعمال کیا گیا تھا ہمیں پولنگ کے دن انٹرنیٹ کی بندش، نتائج جاری کرنے میں نمایاں تاخیر اور ووٹوں کی گنتی کے عمل میں بے ضابطگیوں کے دعووں پر بھی تشویش ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ برطانیہ پاکستانی حکام پر بنیادی انسانی حقوق بشمول معلومات تک آزادانہ رسائی اور قانون کی حکمرانی کو برقرار رکھنے کے لئے زور دیتا ہے۔ اس میں منصفانہ قانونی کاروائی کا حق، مناسب عمل کی پابندی اور مداخلت سے پاک آزاد اور شفاف عدالتی نظام شامل ہیں۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان کی ترقی کے لیے اہم اصلاحات کے مینڈیٹ کے ساتھ عوامی حکومت کا منتخب ہونا ضروری ہے نئی حکومت کو اپنی عوام کے سامنے جوابدہ ہونا چاہیے پاکستان کے تمام شہریوں اور برادریوں کے لئے مساوی مفادات اور انصاف کے ساتھ نمائندگی کرنی چاہئے ہم اس کے حصول اور اپنے مشترکہ مفادات کے دائرے میں پاکستان کی آنے والی حکومت کے ساتھ مل کر کام کرنے کے منتظر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *