News4

کانگریس حکومت کا پہلا بجٹ مایوس کن : ہریش راؤ

عوام کی امیدوں پر پاٹی پھر گیا، وعدوں اور عمل میں زمین آسمان کا فرق
حیدرآباد ۔ 10 فبروری (سیاست نیوز) بی آر ایس رکن اسمبلی ہریش راؤ نے آج پیش کردہ بجٹ کو مایوس کن قرار دیا اور کہا کہ کانگریس حکومت کے وعدوں اور عمل میں زمین آسمان کا فرق ہے۔ وعدوں کی تکمیل کیلئے بجٹ میں مناسب فنڈز مختص نہیں کئے گئے۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہا کہ عوامی حکومت کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا گیا ہے۔ کانگریس انتخابی منشور میں ہر دن پرجادربار کرنے کا وعدہ کیا گیا جس کو فراموش کردیا گیا۔ کانگریس کے وعدے صرف وعدے بن کر رہ گئے ہیں۔ کانگریس نے جو وعدے کئے تھے ان پر عوام کا بھروسہ ختم ہوگیا ہے۔ زرعی شعبہ کو نظرانداز کرکے کسانوں کو پریشان کیا گیا ہے۔ اعدادوشمار میں الٹ پھیر کرکے عوام سے جھوٹی ہمدردی دکھانے کی کوشش کی گئی ۔ ہریش راؤ نے استفسار کیا کہ بجٹ میں زرعی شعبہ کیلئے صرف 19 ہزار کروڑ روپئے مختص کرکے ریتو بھروسہ اسکیم پر کیسے عمل ہوگا ۔ ریتو بھروسہ اسکیم کیلئے 22 ہزار کروڑ کی ضرورت ہوگی۔ کسانوں کے قرض معافی کے وعدے کو فراموش کردیا گیا ۔ ریتو بیمہ اسکیم کیلئے بجٹ میں فنڈز نہیں دئے گئے۔ فصل کو بونس دینے کا وعدہ بوگس ثابت ہوا ہے۔ اسمبلی میں حکومت نے جھوٹ بولا ہے۔ ہریش راؤ نے حکومت سے سوال کیا کہ ریاست میں 24 گھنٹے برقی کہاں ہے۔ لاگ بگس کا معائنہ کرنے کا کانگریس حکومت کو چیلنج کیا۔ 6 گیارنٹی پر عمل کیلئے قانون کا وعدہ کیا تھا۔ اسمبلی کے دو سیشن ہوگئے۔ قانون سازی کے وعدے سے انحراف کیا گیا۔ حکومت 100 دن میں 6 گیارنٹی پر عمل کرنے کا وعدہ کرچکی ہے۔ اب اس سے راہ فرار اختیار کررہی ہے۔ آسرا پنشن ہنوز جاری نہ کرنے کا الزام عائد کیا۔ بیروزگاری بھتہ کیلئے بجٹ میں فنڈز مختص نہ کرنے کی وجہ طلب کی۔ ملازمین کے پی آر سی، زیرالتوابقایاجات کیلئے میں گنجائش فراہم نہیں کی گئی۔2

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *